”انسانی حقوق” امریکی ہتھیار؟

نوید مسعود ہاشمی

افغان وزیر خارجہ ملا امیر خان متقی پاکستان کے دورے پر تشریف لائے تو انہوں نے ایک موقع پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا تھا کہ۔۔۔ طالبان حکومت نے افغان سرزمین پر اپنی رٹ قائم کر رکھی ہے، افغان وزیر خارجہ نے کہا کہ ہمیں سمجھ نہیں آرہی کہ ہم کون سا ایسا عمل کریں کہ جس سے امریکہ سمیت دیگر ممالک ہمیں تسلیم کرلیں،
اصل میں امریکہ کا مسئلہ یہ ہے کہ وہ سب کچھ کرکے بھی کچھ ماننے کو اور سب کچھ سمجھ کر بھی کچھ سمجھنے کے لئے تیار نہیں ہے، امریکہ افغان طالبان کے خلاف ”انسانی حقوق” کے نعرے کو بطور ہتھیار استعمال کر رہا ہے، امریکہ جانتا ہے کہ وہ طالبان کو اسلحے کی طاقت سے شکست دینے میں مکمل ناکام رہا ہے، اب وہ انسانی حقوق، عورتوں کے حقوق، لڑکیوں کی تعلیم جیسے نعروں کو ”ہتھیار” کے طور پر استعمال کرکے افغان طالبان کی جیتی ہوئی بازی بلٹنا چاہتا ہے، وگرنہ، امریکی سرزمین پر سیاہ فام شہریوں کے ساتھ جس قسم کا غیر انسانی سلوک روا رکھا جارہا ہے، اس سے پوری دنیا واقف ہے، عراق کی ابو غریب جیل، افغانستان کی بگرام جیل اور گوانتاناموبے میں ۔۔۔امریکیوں نے بے گناہ اور مظلوم قیدیوں کے ساتھ جو خوفناک سلوک کیا۔۔۔ اس نے پوری دنیا کو شرمندہ کرکے رکھ دیا، انسانوں پر ظلم ڈھانے میں دنیا میں پہلا نمبر آج بھی امریکہ کا ہی ہے،
امریکہ نے ویت نام اور عراق میں انسانوں پر جو قیامت خیز مظالم ڈھائے۔۔۔ زہریلے کیمیکلز سے انسانوں کو جس خوفناک انداز میں نشانہ بنایا وہ ظلم کی امریکی تاریخ کا ایک بدترین باب ہے، ”امریکہ اور انسانی حقوق” دو متضاد اسباق ہیں، ”امریکہ اور عورتوں کے حقوق” آگ اور پانی کو اکٹھا کرنے کے مترادف ہے، انسانی حقوق ہوں، عورتوں کے حقوق ہوں یا بچوں کے حقوق، یہ کبھی امریکہ کو چھوکر بھی نہیں گزرے، صدارتی منصب سنبھالنے کے بعد امریکی صدر جوبائیڈن نے جو یہ کہا تھا کہ ”انسانی حقوق کو امریکہ کی خارجہ پالیسی میں ایک اہم مقام حاصل ہے اور امریکہ انسانی حقوق ۔۔۔کے حوالے سے کبھی بھی سمجھوتہ نہیں کرے گا” ہم نے تب بھی اپنے کالموں میں اس بات کی نشاندہی کی تھی۔۔۔ کہ امریکہ ماضی کی طرح انسانی حقوق کے نعرے کو مسلمان ممالک کے خلاف سیاسی ہتھیار کے طور پر استعمال کرے گا، وگرنہ ڈاکٹر عافیہ صدیقی جیسی ایک کمزور اور نحیف عورت پر مظالم کے پہاڑ توڑنے والے امریکہ کی بلا جانے کہ ”انسانی حقوق” ہوتے کیا ہیں؟ ڈاکٹر عافیہ صدیقی مظلوم خواتین پر قیامت خیز مظالم ڈھانے والے امریکہ اور ان کے۔۔۔ ہمنوائوں کا ٹولا خود نہ صرف انسانی حقوق کا دشمن، بلکہ غیر انسانی رویوں کا بانی بھی ہے،
افغانستان میں طالبان حکومت کو تسلیم کرنے کی۔۔۔ بات آئے یا افغان طالبان سے رابطے رکھنے کی، تو امریکہ اور اس کے چاپلوس ٹوڈیوں کا ٹولا، فوراً انسانی حقوق اور عورتوں کے حقوق کا شوشا۔۔۔ چھوڑکر انہیں بدنام اور بلیک میل کرنے کی کوشش کر تا ہے، حالانکہ جاننے والے جانتے ہیں کہ۔۔۔ عورتوں کے حقوق ہوں یا انسانی حقوق، افغان طالبان اپنے پچھلے دور حکومت میں بھی ان معاملات میں… سرخرو ٹھہرے, اور اب بھی امریکہ اور اس کے اتحادیوں سے بڑھ کر افغان طالبان ہی انسانی حقوق کے علمبردار ہیں۔… دلچسپ بات یہ ہے کہ امریکہ کا منظور نظر بھارت بھی ایک منظم انداز میں طالبان کے انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کے… بارے میں پروپیگنڈہ کر رہا ہے، انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں اور عورتوں کے حقوق کو دبانے کے حوالے سے… بھارت کی پروپیگنڈہ مہم دیکھ کر ایسے لگتا ہے کہ ….جیسے نریندر مودی نے دہلی اور ممبئی میں درجنوں افواہ ساز فیکٹریاں لگا رکھی ہیں، ان فیکٹریوں میں طالبان پر انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کے الزامات گھڑے جاتے ہیں۔۔۔ اور پھر بھارتی میڈیا اور سوشل میڈیا کے ذریعے ان جھوٹے الزامات کو پوری دنیا میں۔۔۔۔ پھیلایا جاتا ہے،
خود بھارت کے اندر انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیوں کی صورتحال یہ ہے۔۔۔ کہ بھارت کی سرزمین اس وقت اقلیتوں پر تنگ ہوچکی ہے، وہاں مودی کے ہندو شدت پسندوں اور سرکاری وردیوں میں ملبوس دہشت گردوں ۔۔۔کے ہاتھوں نہ مسلمانوں کی عزت محفوظ ہے اور نہ ہی جان و مال کو تحفظ حاصل ہے،
بھارت میں مسلمان بچے ہوں، جوان ہوں، بوڑھے ہوں یا عورتیں سب ہی کو… ہندو شدت پسندی کا نشانہ بنتے ہوئے پوری دنیا دیکھ رہی ہے، باپردہ مسلمان عورتوں کو ہندو دہشت گرد، چوکوں اور چوراہوں میں گھیرتے ہیں… اور پھر انہیں بدترین تشدد کا نشانہ بنا کر زخمی کر دیتے ہیں یا شہید، ان واقعات کے درجنوں وڈیو کلپس سوشل میڈیا پر وائرل ہوچکے ہیں، مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوج انسانی حقوق کی جو خلاف ورزیاں کر رہی ہے، وہ بھی دنیا کو نظر آرہا ہے، انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں پر ہیومن رائٹس واچ اپنی کئی رپورٹیں اقوام متحدہ اور امریکی کانگرس کو پیش کر چکی ہے,
چند ہفتے قبل ریاست تری پورہ میں جنونی ہندو گروہوں نے کم از کم چودہ مسجدوں… کو جلا کر شہید کر ڈالا، مساجد میں رکھے ہوئے قرآن پاک کے نسخوں کی توہین بھی کی گئی، حد تو یہ ہوئی کہ… جن لوگوں نے مساجد کو جلانے کے خلاف سوشل میڈیا پر پوسٹیں چڑھائیں یا… جنہوں نے ہندو جنونیوں کے اس ظلم کو سوشل میڈیا کے ذریعے بے نقاب کرنے کی کوششیں کیں، بھارتی پولیس نے عورتوں، مردوں، صحافیوں یا عام لوگوں میں تمیز کئے بغیر…. ان چار سو بے گناہ لوگوں کو گرفتار کرکے ٹارچر سیلوں کی… زینت بنا دیا، تری پوری پولیس نے ہندو دہشت گردوں کو گرفتار کرنے کی بجائے الٹا مسلمانوں پر… ہی مقدمات بنا ڈالے,
اربوں ڈالرز کا سوال یہ ہے کہ کیا امریکہ، اقوام متحدہ، روس اور دیگر عالمی دنیا کو انسانی حقوق کی یہ… خلاف ورزیاں نظر نہیں آتیں؟ انہوں نے آج تک انسانی حقوق کی ان بدترین خلاف ورزیوں پر نریندر مودی کا بائیکاٹ کیوں نہیں کیا؟
وہ افغان طالبان کہ جنہوں نے کابل میں داخل ہونے کے بعد اپنے تمام دشمنوں کو معاف کر دیا، دشمن سامنے بھی آیا تو اس سے منہ پھیر کر کھڑے ہوگئے، جن کی طرف سے دشمنوں کو عام معافی کا اعلان سن کر پوری دنیا عش، عش کر اٹھی، جن طالبان کی قید میں ا یوان ریڈلی نام کی ایک خاتون رہی، تو وہ ان کے حسن سلوک اور اعلیٰ کردار سے اس قدر متاثر ہوئی کہ… مسلمان ہوگئی، انہیں تو انسانی حقوق کے طعنے دئیے جارہے ہیں، پس ثابت ہوا کہ امریکہ اور اس کے اتحادی ”انسانی حقوق” کا نعرہ طالبان حکومت کے خلاف ہتھیار کے طور پر استعمال کر رہے ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*

9 + 3 =