شاعری

تُو جو روٹھا ہے

تازہ غزلڈاکٹر مقصود جعفریتُو جو روٹھا ہے تو اب تجھ کو منائیں کیسےناز بردار ترے ناز اُٹھائیں کیسے بات کرتے ہوۓ ہم خود ہی لرز جاتے ہیںبات کچھ ایسی بھیانک ہے سنائیں کیسے اب تو تاریکیِ شب اپنا مقّدر ٹھہریدیپ جو تُو نے بجھا ۓ وہ جلائیں کیسےسرِ ساحل جو کھڑے ہیں وہ تماشائ ہیںناخدا ڈوبنے والوں کو بچائیں کیسے ... Read More »

شاعری کی اہمیت سے انکار ناممکن ہے

تحریر: محمد حماد فاروق، چکوال malikhf8@gmail.com دور حاضر میں شاعر ی کی اہمیت سے انکار نا ممکن ہے نوجوانوں کا جھکاؤشاعری کی جانب ہوتا جا رہا ہے علامہ اقبال ؒ کی شاعری نوجوانوں کی صلاحیتوں کو اجاگر کرنے کے لیئے ہیں، مجھے بچپن سے غزلوں کا شوق تھا شاعر حضرات شاعری عنوان پر رہ کے کیا کرتے ہیں جس میں ... Read More »

رحمت یزداں

ڈاکٹر مقصود جعفری جو رحمتِ یزداں ہے کفِ جُود و کرم میںفرعون کو حاصل ہے کہاں جور و ستم میں وہ تجھ کو ترے قلبِ شکستہ میں ملے گاتُو ڈھونڈتا پھرتا ہے جسے دیر و حرم میںتُو واقفِ تادیبِ قلم ہی نہیں شایدہے بُرّشِ شمشیر مری نوکِ قلم میں وہ آفتِ جاں ہے کہ کئ چھوڑ کے دُنیابستے ہی چلے ... Read More »

جب بدل جاتا ہے دل

ڈاکٹر مقصود جعفریوہ تصوّر میں بھی آئیں تو مچل جاتا ہے دلدرمیانِ قعرِ دریا بھی اُچھل جاتا ہے دلمُضطرب دل کا سنبھلنا چارہ گر آساں نہیںہاتھ وہ سینے پہ رکھّیں تو سنبھل جاتا ہے دلآنسوؤں کے سیلِ تُند و تیز کو آنسو نہ کہہموجِ خونیں بن کے آنکھوں سے نکل جاتا ہے دل تُو کہ ہے ناواقفِ جذباتِ اربابِ چمنجب ... Read More »

راہ میں بیٹھے ہوۓ لوگ

گم نہ ہوتے کبھی گم راہ پہ بیٹھے ہوئے لوگدیکھ لیتے جو در_شاہ پہ بیٹھے ہوئے لوگ جب بھی آتا ہوں مرے دل کو قرار آتا ہےکتنے اچھے ہیں یہ درگاہ پہ بیٹھے ہوئے لوگ یہ بھی ممکن ہے ترے حسن کی تمثیل نہ ہوتکتے رہتے ہیں تجھے راہ پہ بیٹھے ہوئے لوگ تم نے دل توڑا خدا خیر کرے ... Read More »

عجیب لڑکی

جس پہ تھی جاں نثار وہ لڑکی عجیب تھیکرتی تھی مجھ سے پیار وہ لڑکی عجیب تھی ہر روز مجھ سے یارو ملاقات کے لیےرہتی تھی بےقرار وہ لڑکی عجیب تھی کہہ کر مجھے کہ آپ سے اب بولنا نہیںروتی تھی زارو زار وہ لڑکی عجیب تھی بن سوچے سمجھے اپنی وہ مہنگی سی چیز بھیدیتی تھی مجھ پہ وار ... Read More »

صباجانے

تازہ غزلڈاکٹر مقصود جعفری(ادب نواز احباب کی نذر) گُلوں سے کس کو محبّت ہے یہ صبا جانےہمارے دل کا کوئ کیسے ماجرا جانے مقامِ دار و رسن یُوں ہی کب ملا ہے مجھےمیں جس مقام پہ پہنچا ہوں کوئ کیا جانے گزر رہی ہے ہماری یہ زندگی کیسےجو گزرے ہم پہ حوادث تری بلا جانےرفیقِ شب تھا مرا اس سے ... Read More »

دن کوئی گزارا جائے

بوجھ کچھ دل سے محبت کا اتارہ جائےکوچہ یار میں دن کوئی گزارا جائے اس محبت میں تو دل ٹوٹنا ہے عام سی باتبچ کے رہنا کہ نہ دل ٹوٹ تمہارا جائے دیکھنا کیسے مری جان میں جاں آتی ہےاس کے ہونٹوں سے مرا نام پکارا جائے یہ تو ممکن نہیں درویش محبت نہ کرےمجھ سے درویش کو چوراہے پہ ... Read More »

تحفہ ء عید

تاز ڈاکٹر مقصود جعفریاہلِ جنوں بھی صاحبِ ادراک ہو گئےچالاک تو نہیں تھے پہ چالاک ہو گٸےدریا سے ہم کو اذنِ روانی ملا تو ہمسیلِ رواں پہ موجہء بے باک ہو گئےتب جا کے ہم کو رنگِ گُلِ سرمدی ملاجب شاخِ گُل پہ غنچہ ء صد چاک ہو گئےمیری فغاں سے شہرِ خموشاں میں غلغلہنالے بھی میرے گنبدِ افلاک ہو ... Read More »

رشکِ چمن

تازہ غزل ڈاکٹر مقصود جعفری کیا رشکِ چمن آج وہ گزرا ہے ادھر سےپھولوں کی مہک آتی ہے ہر راہگزر سے آتی ہے شبِ وصل شبِ ہجر کے پیچھےچھٹتے ہیں اندھیرے بھی رُخ نورِ سحر سے کشکول سے ہوتی نہیں اقوام کی عزتتعظیم ہے قوموں کی فقط کاسہءسر سے تُم راکھ میں کیوں ڈھونڈتے پھرتے ہو تپش کویہ گرمی ء ... Read More »