لفظی کہانی

زنجیرِ عدل

وہ روز جاتا ۔۔۔ زنجیرِ عدل ہلاتا ۔۔۔ اسے انصاف کی تلاش تھی ۔۔۔ کوئی شنوائی کو نہ آتا ۔۔۔ وقت گزرا ۔۔۔ محنت کی ۔۔۔ عمارت میں پہچنے کا حق حاصل کیا ۔۔۔ باہر زنجیر ہلانے والوں کا جم غفیر تھا ۔ اندر پہنچ کر معلوم ہوا زنجیرِ عدل کی آواز اندر نہ آتی تھی ۔۔۔ عمارت ساؤنڈ پروف ... Read More »

( آواز )

آمنہ نثار راجہ… وہ بہت جذباتی ہوتے ہوئے بولی…. لوگ ظلم کے خلاف آواز اٹها رہے ہیں پهر بهی انصاف مہیسر نہیں ایسا کیوں ؟؟ اس سوال نے مجهے عجیب کشمکش میں مبتلا کر دیا … شاید اس لیے کہ ظلم کے خلاف آواز اٹھانے والوں سے زیادہ طاقتور وار ظالم کا ساتھ دینے والے ہیں. Read More »

” ہار “

پچاس لفظوں کی کہانی بشیر اور بلال نے ہار خرید کر ماں کو دیئے اور کہا کہ کل مدرسے میں ہماری دستار بندی ہے ۔ وہاں سے واپسی پر ہمیں یہ ہار پہنائیے گا ۔ جہاز آئے ، مدرسے پر بمباری کی اور چلے گئے ۔۔۔ دروازے پر ماں ہار ہاتھوں میں تھامے ان کا انتظار کرتی رہ گئی ۔۔۔ ... Read More »