سیکھ گئے 

ہم غم کو چھپا نا سیکھ گئے
ہم درد کو دبانا سیکھ گئے
وہ جس نے چھوڑا ہاتھوں کو
ہم ان کو بھلانا سیکھ گئے
وہ وعدے پورے ہو نام سکھے
ہم ان قسموں کو بھلانا سیکھ گئے
کبھی یاد اب آتی نہیں انکی
ہم دل کو منانا سیکھ گئے
بنا ان کے جینا مشکل تھا مگر
ہم پھر سے جینا سیکھ گئے
Nabila Malik Haya



Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*