چمن  رو  رہا  ہے  فضا رو رہی ہے

چمن  رو  رہا  ہے  فضا رو رہی ہے
گلوں  سے لپٹ کر صبا رو رہی ہے

مرا  درد  اپنا  سمجھتی  ہے  شاید
یہاں  آتے جاتے  ہوا  رو  رہی  ہے

جواس دل میں دیکھےتمناکےلاشے
کہیں  دور بیٹھی  قضا رو رہی ہے

غموں پرمیں پاگل سا ہسنےلگا ہوں
مجھے دیکھ کر یہ  وفا رو رہی ہے

زمیں  بوس  دل کا مکاں ہو گیا ہے
محبت  کہ بے آسرا  رو   رہی  ہے

گزر جاوں  گا  جان  سے گر یہ جانا
مری  یاد  میں  دلربا  رو  رہی ہے

ذرا   زندگی   بے   تبسم  کیا   تھا
مگر   آج   بے  انتہا   رو  رہی  ہے

مرا  درد  تاسی  سمیٹے ہوئے  ہے
ترے  پاس  آتے  صدا  رو رہی  ہے

۔۔۔ طارق تاسی۔۔۔



Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*