منکر سے مومن

ASIA PERVEEN
تاریخ گواہ ہے کہ جب جب باطل اسلام کی راہ میں ابولہب بنا ہے عمر جیسے مشرفِ اسلام ہو کر اِن کے لئے سیسہ پلائی دیوار بنے ہیں۔اسلام کی سچائی کو کوئی بھی آنچ نہیں پہنچاسکا ہے ۔اسلام کے بدترین دشمن اسلام کے مخافظ بنے اور پھر اٹل چٹان کو ئی نہ ہلا سکا
ہندوئوں کی اسلام دشمنی کسی سے ڈھکی چھپی نہیں ہے برصضیر پاک وہند کی تقسیم کی سب سے بڑی وجہ ہندوئوں کی مسلمانوں سے دشمنی تھی




دن بادن مسلمانوں کی زندگی کا دائرہ تنگ سے تنگ ہوتا جا رہا تھا برصغیر کے ٹکرے ہونے کے باوجود یہ دشمنی ختم نہ ہو سکی موجودہ ہندوستان میںمسلمانوں آزادی کی زندگی میئسر نہیں ہے ۔مسلمانوں سے دشمنی کا واضح ثبوت ۱۹۹۲میں ساری دنیا کے سامنے آیا جب بابری مسجد کو شہید کیا گیا مسلمانوں کے ایمان کو للکارا گیابہت سے قربان بھی ہوئے مگر بھپرے ہوئے ہندوئوں نے اپنی نفرت کو کم نہ ہونے دیا ۔مگر اُن کی بھول تھی کہ وہ اللہ کے غضب کوآواز دے رہیں ہیں جس نے اپنے گھر کی حفاظت کا زمہ خود لیا ہے ۔اللہ تو دشمنوں کو راہ دیکھا کر اُن سے ہی باطل کو ختم کروا دیتا ہے ۔بابری مسجد کو گرانے والوں میں بلبیرسنگھ اور اُس کا دوست بھی تھا ۔مسلمانوں سے نفرت میںجنونیت اختیار کر گیا تھا جب جنونیت کا غبار اترا تو اللہ کی پکڑ شروع ہو گئی ہر گزرتا پل خوف بے چینی کی لپیٹ میں آنے لگابلبیر سنگھ کا دوست تو اپنے حواس ہی کھو بیٹھااسِ بات نے اور بلبیر سنگھ کا جینا محال کر دیا کسی لمحہ قرار نہ رہا آخر کار اللہ کے یکتا ہونے پر ایمان لے آیا اور دائرہ اسلام میں داخل ہو گیا اللہ کے گھر کو شہید کرنے والا پھر اللہ کے گھر کا محافظ بن گیا توبہ کا ایسا راستہ اختیار کیا کہ ہر کوئی حیران رہ گیا ایسا عہد کیا کہ ہندوئوں کی نفرت کو غلط قرار دیا ۔۱۰۰مساجد بنانے کی اعلان کیا اب تک ۹۰ مساجد بنا چکا ہے ۔اب بلبیر سنگھ نہیں محمد عامر ہے ۔بے شک اللہ بہت بڑا ہے
کون ہے جو اُس کے جلال کے آگے




Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*