میں جب بھی بات کرتا ہوں 

میں جب بھی بات کرتا ہوں
دل کومحو منا جات کرتا ہوں

میں جس نظریے کا دا عی ہوں
دل سے اظہار  خیالا ت کرتا ہوں

دل سے نکلے الفاظ بولتا ہوں
میں کونسے کما لا ت کرتا ہوں

اخلاص کے معنی جو سمجھتا ہو
میں اسی سے ملا قات کرتا ہوں

لوگ چہرے پہ  خول چڑ ھا لیتے ہیں
میں دو رنگی سے اختلافات کرتا ہوں

میں وہ پیڑ ہو جو  با ثمر ہے کہ
کھڑا رہ کر مقا بلہ آفات کرتا ہوں

وفا شعا ری میری سر شت میں ہے
دوستی کرتا ہوں تا حیات کرتا ہوں
شاعر :-
مہر غلام نبی بہادر




Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*