چار ٹھگ اور ایک دیہاتی …

دور حاضر کے عجیب فتنوں سے بچنے کا منفرد راز ڈاکٹر محمد اعظم رضا تبسم کے قلم سے .
پرانے وقتوں میں لوگوں کو بیوقوف بنا کر مال بٹورنے کے لیے ایک گروہ ہوا کرتا تھا اس گروہ سے وابستہ لوگ ٹھگ کہلاتے تھے، انہی ٹھگوں کا ایک واقعہ ہے کہ ….!
“ایک دیہاتی بکرا خرید کر اپنے گھر جا رہا تھا کہ چار ٹھگوں نے اسے دیکھ لیا اور ٹھگنے کا پروگرام بنایا۔ چاروں ٹھگ اس کے راستے پر کچھ فاصلے سے کھڑے ہو گئے۔ وہ دیہاتی کچھ آگے بڑھا تو پہلا ٹھگ اس سے آکر ملا اور بولا ’’بھائی یہ کتا کہاں لے کر جارہے ہو؟
‘‘دیہاتی نے اسے گھور کر دیکھا اور بولا ’’بیوقوف تجھے نظر نہیں آرہا کہ یہ بکرا ہے کتا نہیں‘‘۔
دیہاتی کچھ اورآگے بڑھا تو دوسرا ٹھگ ٹکرایا۔ اس نے کہا ’’یار یہ کتا تو بڑا شاندار ہے کتنے کاخریدا؟
‘‘ دیہاتی نے اسے بھی جھڑک دیا۔ اب دیہاتی تیز قدموں سے اپنے گھر کی جانب بڑھنے لگا مگر آگے تیسرا ٹھگ تاک میں بیٹھا تھا جس نے پروگرام کے مطابق کہا ’’جناب یہ کتا کہاں سے لیا؟
اب دیہاتی تشویش میں مبتلا ہو گیا کہ کہیں واقعی کتا تو نہیں۔ اسی شش و پنج میں مبتلا وہ باقی ماندہ راستہ کاٹنے لگا۔بالآخر چوتھے ٹھگ سے ٹکراؤ ہوگیا جس نے تابوت میں آخری کیل ٹھونکی اور بولا: جناب کیا اس کتے کو گھاس کھلاؤ گے؟



اب تو دیہاتی کے اوسان خطا ہو گئے اوراس کا شک یقین میں بدل گیا کہ “یہ واقعی کتا ہے۔” وہ اس بکرے کوچھوڑ کر بھاگ کھڑا ہوا یوں ان چاروں ٹھگوں نے بکرا ٹھگ لیا. اب آپ نے خیال کرنا ہے کہ آپ کے اردگرد کتنے ٹھگ ہیں .بظاہر نظر نا آنے والے ان ٹھگوں کی پہچان یہ ہو گی کوی آپ کو دین اسلام کے بارے میں عجیب شکوک و شبہات میں مبتلا کرے گا کوی پاکستان کے بارے میں گالم گلوچ کرے گا کوی ٹھگ آپ کو کہے گا ہم کسی فرقے سے تعلق نہیں رکھتے جبکہ وہ خود سب سے بڑے فرقے کے تاجدار ہوں گے .کوی ٹھگ آپ کے نبی کریم کی شان مبارکہ میں طرح طرح کے نقص لگا رہے ہوں گے اور ٹھگوں کی ایک قسم آپ کو ایسی بھی ملے گی جو اخلاقیات سے بہت دور ہو گی اور ایک قسم ایسی جن کے نزدیک عبادات کا بہت مقام ہو گا حقوق انسانی بے شک پامال ہوں .ایک قسم ایسی بھی ہو گی جو دین کو سراسر فضول اور علماء کو گالیاں دے گی ….
چند دن پہلے مجھے ایک ٹھگ سے واسطہ پڑا جو کہتا تھا بھای دین گھر تک.محدود رہنا چاہیے .یہ ٹھگ بڑے تعلیم یافتہ بھی ہوں گے اور بڑے چالاک بھی .بہر حال ٹھگوں کا ایک گرو ایسا بھی ملے گا جو صحابہ میں سے بعض کی عظمت مانتا ہوگا اور بعض کو نعوذ بااللہ گالیاں دیتا ہو گا …بہر حال آپ نے ان ٹھگوں سے بچنا ہے .اپنے مسلک اور مذہب کے جید علماء سے تعلق قایم رکھیں .. عبادات ضرور کریں لیکن ساتھ میں حقوق مخلوق بھی پورے کریں .جتنا ادب دوسروں کا کرتے ہیں اس سے کہیں زیادہ اپنے ماں باپ کا کریں.حقوق کی انجام دہی کا آغاز اپنے گھر سے کریں .روز رات کو ماں یا باپ میں سے کسی کے پاوں دبا کرسویں. صبح اٹھ کر ان کی زیارت کریں.محلے کے غریب بچے کو کتابیں لے کر دیں .میں یہ آپ کو.ٹھگوں کی بحثوں سے بچنے کا طریقہ بتا رہا ہوں .یہ جو ٹھگ ہیں یہ خیر الناس من ینفع الناس سے بہت دور ہوں گے.کسی نا کسی کو برا کہتے ہی رہیں گے .بس ان سے بچنے کے لیے اپنے مسلک کے ایسے عالم کی سیرت النبی صلی اللہ علیہ وسلم پر لکھی کتاب کا مطالعہ کریں جن عالم کے عشق رسول کا.چرچا عام ہو .کیونکہ روکھی سوکھی کتاب صرف معلومات کا.ایک مجموعہ ہو گی بس .عشق سے خالی .تو اپنے نبی کی سیرت کو اپناو ..عبادات کا تعلق تمھاری اپنی ذات سے ہے .حقوق سے دوسروں کو خوشی ملتی ہے .
تعلیمی ٹھگوں سے بھی بچو .جو یہ کہتے ہیں اپنے بچوں کو فلا میڈیم میں داخل کرواو دیکھنا مولوی نا بن جاے.اور ان ٹھگوں سے بھی بچنا جو ایسا دین پڑھاتے ہیں چلہ لگواتے ہیں کہ ان کے بچوں کو.اپنے ماں باپ کافر نظر آتے ہیں .بلکہ ایسے ادارے تلاش کرو جہاں پڑھنے والوں کو دونوں آنکھیں روشن ہوں .ڈاکٹر بھی ہو عالم بھی ہو .انجینیر بھی ہو عالم بھی ہو . ایسی تعلیم دینے والے ٹھگوں سے دور رہنا جن کے بچے پڑھ لکھ کر ماں باپ کو ہی جاہل سمجھتے ہیں یا یہ جملے بولنے لگ جایں .امی .ابو آپ کو.کیا پتہ آپ کا دور تو بکواس تھا یہ جدید زمانہ ہے .. آپ کو.ایسے ٹھگ بھی ملیں گے جو شادی خاندانی نظام کے خلاف باتیں کرتے ہیں .ایسے ٹھگ اور خطرناک ہوں گے جو ناجایز منافع خوری کی دلیلیں گھڑتے ہیں .ایسے ٹھگ بھی جو پاکستان نے ہمیں کیا دیا کہہ کر حب الوطنی پر وار کرتے ہیں .بچیں اور بچایں ان ٹھگوں سے خود کو بھی اور اپنے پیاروں کو بھی .اللہ ہم سب کا حامی و ناصر ہو۔
شکریہ ڈاکٹر محمد اعظم رضا تبسم ..
ڈاکٹر تبسم کی مزید عمدہ تحریریں اور انتخابات پڑھنے کے لیے فیس بک پیج پسند کریں .ہمارا مقصد پہلے اپنی اصلاح کرنا ہے پھر دوسروں کو درستی کی دعوت دینا ہے .. اصلاح خود سے شروع کریں جلد معاشرہ بدل جاے گا .محبت اخوت اور احساس عام ہو گا. اچھی بات اگے پھیلانا بھی صدقہ ہے . ہمارے پیج کا لنک دستیاب ہے …https://www.facebook.com/Dr.M.AzamRazaTabassum/
یہ تحریریں .واٹس ایپ پہ حاصل کرنے کے لیے .ہمیں اپنا نام .شہر کا نام اور جاب لکھ کر اس نمبر پر میسج کریں . 03317640164.
شکریہ .ٹیم نالج فارلرن.




Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*