بد لنا ہے 

..
ہم کو اپنے حالات کو
 بد لنا ہے
سب کو اپنے خیآ لات کو
 بد لنا ہے
تبدیلی اب ہو چکی ہے نا گزیر
وطن میں
ملت کو اپنے معاملات کو
بد لنا ہے
کب تلک بد نما چہرے ہم پر
 مسلط رہیں گے
اجتماعیت کو اپنے احساسات کو
 بد لنا ہے
اب نہ تم قوم کو منزل سے
ہٹا پاؤ گے کبھی
راہنماو ں کو اپنے ارشا دات کو
بد لنا ہے
قیادت جو بھی ہو مگر
ہو صادق و آمین
عوام کو اپنے جذبات کو
 بد لنا ہے
مشکل نہ رہا اب مقاصد
کا حصول بھی
اہل دانش کو اپنے نظریات  کو
بد لنا ہے
عیاں ہے سب کس چیز نے
 تباہی پھیلائی ہے
خود غرضو ں کو اپنے مفادات کو
 بد لنا ہے
اندھیر و ں کو پاک سر زمین سے
دیس نکالا دینا ہے
اہل قلم کو اپنے مند ر جات کو
بد لنا ہے
کر پشن کا کلچر پنپنے نہیں
 پا ے گا ہر گز
ووٹران کو اپنے تصو رات کو
بد لنا ہے
تعصب سیاسی و مسلکی سے
بالا تر  سو چیں
ہر اینکر کو اپنے سوالات کو
بد لنا ہے
حالات نے واضح اک سوالنامہ
کیا ہے جاری
بہادر با مطا بق منظر نامہ جوابات کو
بد لنا ہے

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*